ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابرافتخار نے کہا ہے کہ صحت عامہ کےتحفظ کیلئےملک بھر ‏میں پاکستان آرمی کو سول اداروں کی معاونت کیلئےطلب کیاگیاہے پاکستان آرمی نےکسی بھی قسم ‏کا انٹرنل سیکیورٹی الاؤنس کلیم نہ کرنےکافیصلہ کیا ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کورونا مثبت کیسزکی شرح خطرناک ‏حدتک بڑھ گئی ہے 23اپریل کو 157 افراد کورونا کی وجہ سےاپنی زندگی سےمحروم ہوگئے اس ‏وقت 570 افراد وینٹی لیٹرز پر ہیں اور 4 ہزار سے زائدکی کشیدہ صورتحال ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں شرح اموات 2.16 فیصدتک پہنچ چکی ہے این سی سی نےکورونا وبا ‏کی تیسری لہر پر قابو پانےکیلئے اہم فیصلےکیے، صحت عامہ کےتحفظ کیلئےملک بھر میں ‏پاکستان آرمی کو سول اداروں کی معاونت کیلئے طلب کیاگیاہے ایسے میں پاکستان آرمی نےکسی ‏بھی قسم کا انٹرنل سیکیورٹی الاؤنس کلیم نہ کرنےکافیصلہ کیا ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ ملک بھرکےمثبت شرح والے 16شہروں میں پاک فوج تعینات ہے ‏آج صبح 6 بجے سے تمام اضلاع میں انتظامیہ کی مدد کیلئے پاک فوج کی ٹیمز پہنچ گئی ہیں، پاکستان ‏آرمی تمام ترصلاحیتوں کو بروئے کارلاتےہوئےہرممکن اقدام اٹھائےگی، قانون پرعملدرآمدکی بنیادی ‏ذمہ داری سول اداروں کی ہے لیکن قیام امن کیلئے پاک فوج سول اداروں کی بھرپور مدد کرے گی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here